راولپنڈی (ویب ڈیسک)

چیمبر آف سمال ٹریڈرز اینڈ سمال انڈسٹری کے صدر شیخ آصف ادریس نے آل پاکستان کار ڈیلرز ایسوسی ایشن پنجاب کے عہدیداران کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت منی بجٹ میں نئی کاروں پر عائد ٹیکس میں کمی کرے اور لوکل اسمبل کو کو فروغ دینے کیلئے انڈسٹریل اسٹیٹ زون کار خانے لگانے کی جگہ دی جائے، کاریں اب عام آدمی کی قوت خرید سے باہر ہو رہی ہیں اس کیلئے ضروری ہے کہ مقامی سطح پر تیار کی جائیں پرانی کاروں پر حالیہ امپورٹ ٹیکس ختم کیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے آل پاکستان کار ڈیلرز ایسوسی ایشن پنجاب کے کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پرآل پاکستان تاجر کے صدر اجمل بلوچ، مرکزی انجمن تاجران پنجاب کے صدر شاہد غفور پراچہ اور دیگر رہنما بھی موجود تھے۔انہوں نے صدر حاجی طارق اعوان، چیئرمین آل پاکستان کارڈیلرز ایسوسی ایشن میاں شعیب، وائس چیئرمین شہزاد اسلم سمیت تمام منتخب عہدیداران اور ممبران ایگزیکٹو کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ان کے تحفظات اور مطالبات پر ہر پلیٹ فارم پر آوزاز اٹھائی جائے گی انڈسٹریل اسٹیٹ میں نئی کاریں تیار ہوں گی تو اس سے معیشت اور روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے مقامی تیار ہونے والی کاروں کی قیمتیں بھی کم ہوں گی پرانی کاروں پر امپورٹ ٹیکس کم کیا جائے تمام دکاندار ڈنٹر، پینٹر مکینک کار ڈیلرز سمیت لاکھوں لوگوں کا روزگار وابستہ ہے امپورٹ مہنگا کرنا اس کا حل نہیں ہے لوکل انڈسٹری کا فروغ  دیناوقت کی اہم ضرورت ہے اسمبلنگ کی اجازت دی جانی چایئے لوکل اسمبلنگ پر امپورٹک کئے جانے والے پارٹس پر ٹیکس کم ہونا چایئے۔انہوں نے کہا کہ ڈیوٹی بڑھنے سے نئی کاریں پہنچ سے دور ہوتی جا رہی ہیں جبکہ لوکل کار تیار ہونے سے لاکھوں لوگوں کو روزگار ملیاورحکومت کو معیشت بہتر بنانے میں مدد ملے گی حکومت دوہری پالیسی ترک کرکے عوام کو ریلیف دے  انہوں نے تمام عہدیداران کو یقین دلایا کہ چیمبر کے پلیٹ فارم سے ان کے مسائل قائمہ کمیٹی خزانہ ایف بی آر اور منسٹری آف کامرس اینڈ انڈسٹری تک پہنچائیں گے۔

 

 

By Editor