لاہور  (ویب ڈیسک)

پاکستان چائنہ سینٹر کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر وانگ زیہائی نے کہا ہے کہ کئی برس کی ترقی کے بعد فرنیچر انڈسٹری چین ڈیزو نے پیداوار، سپلائی اور مارکیٹنگ کے انضمام کے ساتھ ایک آرگینک انڈسٹری چین تشکیل دے دی ہے۔ جمعرات کو ”پاک چائنا فرنیچر” آن لائن وڈیو کانفرنس کی صدارت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم دو طرفہ اقتصادی اور تجارتی تعاون کو فروغ دینے کے لیے صنعتی دوروں، پراجیکٹ انویسٹمنٹ اور عوامی رابطوں میں تعاون کو مزید فروغ دینے کے لیے فرنیچر کی صنعت میں باہمی روابط سے استفادہ کر سکتے ہیں۔ پاکستان فرنیچر کونسل کے سی ای او میاں کاشف اشفاق نے پاکستان کی نمائندگی کرتے ہوئے دونوں ممالک کے چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری اور صنعتکاروں کے مابین قریبی تعاون کی ضرورت پر زور دیا تاکہ اسپیشل اکنامک زونز میں مشترکہ منصوبوں کے قیام، مشترکہ تحقیق و ترقی اور مشرق وسطی کی طرز پر مارکیٹوں کا قیام عمل میں لایا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی فرنیچر انڈسٹری میں ترقی کی بہت زیادہ گنجائش ہے اور یہ برآمدات کے فروغ میں اہم کردار ادا کر سکتی ہے۔ چین میں پاکستان کے کمرشل قونصلر بدر الزمان نے کہا کہ چین کے صوبہ شانڈونگ میں فرنیچر کی ڈیزو انڈسٹری ایک ستون کی حیثیت رکھتیہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان 200 ملین سے زائد آبادی کا ملک اور چین کا آزمودہ اسٹریٹجک پارٹنر ہے۔ چین پاکستان فری ٹریڈ ایگریمنٹکے شاندار نتائج حاصل ہوئے ہیں۔ آئندہ دہائی میں تقریباً 6 ہزار اشیائبالآخر صفر شرح پر ہو جائیں گی جس سے تجارتی حجم میں اضافے کے علاوہ باہمی تعاون اور ایک دوسرے کے لیے مارکیٹ رسائی کی نئی راہیں کھلیں گی۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ سہ ماہی میں پاکستان سے چین کو برآمدات میں 70 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے شرکائپر زور دیا کہ وہ آگے آئیں اور پاکستان میں دوطرفہ تجارت اور سرمایہ کاری کو بڑھانے میں اپنا کردار ادا کریں۔ ڈیزو میونسپل کانگریس چائنہ کی قائمہ کمیٹی کی ڈپٹی ڈائریکٹر محترمہ زونگ لنگ نے کہا کہ ڈیزو فرنیچر کی صنعت شانڈوگ صوبے میں فرنیچر انڈسٹری 70 بلین یوآن سے زیادہ کے 30 صوبائی سطح کے صنعتی کلسٹرز میں شامل ہے۔ فرنیچر کی مصنوعات کی ایک وسیع رینج، وسیع مارکیٹ کوریج اور مکمل انڈسٹریل چین کے ساتھ یہ فرنیچر مصنوعات 30 سے زائد ممالک میں برآمد کی جاتی ہیں۔ انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان مستقبل میں نہ صرف فرنیچر کی صنعت بلکہ انڈسٹریل انٹرنیٹ پلیٹ فارم کی مدد سے دیگر شعبوں میں بھی مشترکہ ترقی کے حصول کے لیے فنانس اور سرمایا کاری میں تعاون کی ضرورت پر زور دیا۔ چین اور پاکستان کے تقریباً 20 کاروباری اداروں نے اس پروموشن کانفرنس میں شرکت کی اور فریقین نے پاکستان کی فرنیچر کی صنعت کے فروغ، مصنوعات کی فروخت اور پاکستان میں پیداوار کی ضرورت پر تبادلہ خیال کیا۔

 

By Editor