لاہور (ویب ڈیسک)

چیف ایگزیکٹو آفیسر پاکستان فرنیچر کونسل (پی ایف سی) میاں کاشف اشفاق نے کہا ہے کہ ڈیجیٹل بینکنگ سے معاشی میدان میں ایک نئے دور کا آغاز ہو گا اور اس سے مالیاتی اور اقتصادی شعبوں کو مزید پیداواری، موثر اور جامع بنانیمیں مدد ملے گی۔ جمعرات کو یہاں وقاص انجم کی قیادت میں کارپوریٹ سیکٹر کے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹلائزیشن میں مالیاتی شمولیت کی رفتار کو تیز کرنے کی بڑی صلاحیت ہے اور ڈیجیٹل ٹرانسفارمیشن اسلامی فنانس کی توسیع میں اہم کردار ادا کر سکتی ہے جبکہ مالی شمولیت کو بہتر بنانے میں بھی مدد مل سکتی ہے۔ انہوں نے پاکستان میں ڈیجیٹل بینکنگ متعارف کرانے کے لیے اسٹیٹ بینک آف پاکستان کو ہدایات جاری کرنے پر وزیر اعظم عمران خان کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ یہ کاروباری برادری کا دیرینہ مطالبہ تھا جسے پورا کیا گیا ہے۔ ڈیجیٹل بینکنگ فریم ورک تمام بینکنگ خدمات کا احاطہ کرے گا۔ اکاؤنٹ کھولنے سے لے کر ڈپازٹ اور ڈیجیٹل ذرائع سے قرض دینے تک اور اکاؤنٹ ہولڈر کو خود کسی برانچ میں جانے کی ضرورت نہیں ہوگی۔ یہ پی ٹی آئی حکومت کا کاروباری آسانیوں کے لیے اچھا اقدام اور پاکستان کے بینکنگ سیکٹر میں نئے دور کا آغاز ہے۔ میاں کاشف نے کہا کہ یہ اچھا شگون ہے کہ اسٹیٹ بینک ابتدائی طور پر ڈیجیٹل بینکنگ کے لیے پانچ لائسنس جاری کرے گا تاکہ مضبوط پس منظر، تکنیکی انفراسٹرکچر، مالی حیثیت، تکنیکی مہارت اور مؤثر رسک مینجمنٹ کلچر کے حامل اداروں کو اس جانب راغب کیا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے قیام کے بعد یہ پہلی مرتبہ کاروباری برادری اور بڑے پیمانے پر لوگوں کو بغیر کسی پریشانی کے میرٹ پر قرضے ملیں گے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ ڈیجیٹل بینکنگ پرائیویٹ سیکٹر کی مالی ضروریات کو بروقت پورا کر کے معیشت کی مضبوطی میں اہم کردار ادا کرے گی اور ون ونڈو کے تحت تمام بنکنگ خدمات و سہولیات بغیر کسی بوجھل طریقہ کار اور بلا تاخیر فراہم ہوں گی۔

By Editor