تاجروں کے مسائل کے حل کیلئے چیئرمین سی ڈی اے کا مارکیٹوں کا دورہ کرائیں گے۔ شکیل منیر
سی ڈی اے مجسٹریٹ کو ایم سی آئی کے چالان اور بھاری جرمانوں کا اختیار نہیں ہے۔ اجمل بلوچ
ٹریڈ لائسنس وزیراعظم نے ختم کئے لیکن ڈی ایم اے عمل درآمد نہیں کر رہا۔ خالد چوہدری
آئی سی سی آئی ٹریڈرز ویلفیئر کمیٹی کا اجلاس، مارکیٹ عہدیداران کی بھرپور شرکت

اسلام آباد ( ویب نیوز )

اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی ٹریڈرزویلفیئر کمیٹی کا اجلاس چیمبر کے صدر محمد شکیل منیر کی صدارت میں منعقد ہوا۔ چیمبر کے سینئر نائب صدر جمشید اختر شیخ، نائب صدر محمد فہیم خان، آل پاکستان انجمن تاجراں اور ٹریڈرز ایکشن کمیٹی اسلام آباد کے صدر اجمل بلوچ،چیمبر کمیٹی کے کنوینر خالد چوہدری، ایف ٹین مرکز کے چیئرمین طاہر عباسی اور صدر احمد خان، سپرمارکیٹ کے صدر شہزاد شبیر عباسی، آبپارہ مارکیٹ کے سیکرٹری جنرل اختر عباسی، ستارہ مارکیٹ کے صدر سید الطاف حسین شاہ، جی ٹین مرکز کے صدر عابد عباسی اور سیکرٹری جنرل اظہر امین، جناح سپر مارکیٹ کے سیکرٹری جنرل عبدالرحمٰن صدیقی، آئی نائن مرکز سے صفدر عباسی اور ولید خالد، آئی اینڈ ٹی سنٹر جی ایٹ ون کے قائم مقام صدر ناصر چوہدری، جی الیون مرکز کے صدر آفتاب گجر، بلیو ایریا سے طاہر محمود کھوکھر، کراچی کمپنی کے نائب صدر شاہد عباسی، آئی اینڈ ٹی سنٹر جی ٹین فور کے صدر چوہدری ظفر اقبال، سٹیل مارکیٹ کے صدر چوہدری عرفان اور دیگر نے اجلاس میں شرکت کی۔


اجلاس میں ایک قرارداد کے ذریعے ایم سی آئی کے ایڈمنسٹریٹرحمزہ شفقات سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ ٹریڈ لائسنس اور بورڈ ٹیکس کا مسئلہ حل کرائیں اور ان کے نوٹس واپس لئے جائیں۔ ایک اور قرارداد کے ذریعے مطالبہ کیا گیا کہ سی ڈی اے مجسٹریٹ کے اپنے اختیارات سے تجاوز کا نوٹس لیا جائے۔ جی ٹین مرکز اور جی الیون مرکز میں لگائی گئی ریڑھیاں مارکیٹوں سے ہٹا کر گراؤنڈ میں شفٹ کی جائیں اور ڈی ایم سے خود ساختہ ٹھیکیدار کی طرف سے جی ٹین فور ویگن اڈہ کے کرایے پر دینے کی انکوائیری کرائی جائے۔
اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر محمد شکیل منیرنے کہا کہ تاجروں کے مسائل کے بہتر حل کیلئے چیئرمین سی ڈی اے کا بلا تفریق تمام مارکیٹوں کا دورہ کرانے کی کوشش کریں گے۔ انہوں نے یقین دہائی کرائی کہ چیمبر مارکیٹ ایسوسی ایشنوں کے تعاون سے تاجر برادری کے اہم مسائل کو حل کرانے کی بھرپور کوشش کرے گا تا کہ ان کو تجارتی سرگرمیوں کو فروغ دینے میں سہولت ہو۔
آل پاکستان انجمن تاجراں اور ٹریڈرز ایکشن کمیٹی اسلام آباد کے صدر اجمل بلوچ نے کہا کہ سی ڈی اے مجسٹریٹ کا ایم سی آئی کے چالان کرنے کا اختیار ہی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کے نوٹیفیکیشن کے مطابق ان کو صرف سی ڈی اے کے چالانوں کی سماعت کا اختیار ہے جبکہ قانون کے مطابق سی ڈی اے مجسٹریٹ کو سرسری سماعت میں صرف پانچ سو روپے تک جرمانہ کرنے کا اختیار ہے۔ انہوں نے ڈپٹی کمیشنر اسلام آباد سے مطالبہ کیا کہ وہ مجسٹریٹ کی طرف سے اپنے اختیارات سے تجاوز کا نوٹس لیں۔
آئی سی سی آئی کی ٹریڈرز ویلفیئر کمیٹی کے کنوینر خالد چوہدری اور چیمبر کے سینئر نائب صدر جمشید اختر شیخ نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان بھر میں صرف کھانے پینے کی اشیاء کا کاروبار کرنے والوں کیلئے ٹریڈ لائسنس ضروری ہے لیکن اسلام آباد میں ڈی ایم اے نے ہر قسم کے کاروبار کیلئے ٹریڈ لائسنس کے نوٹس جاری کئے ہیں جو وزیراعظم کے احکامات کی خلاف ورزی ہے کیونکہ لائسنس کی فیس ختم کرنے کی بجائے یکطرفہ طور پر اس میں کئی سو گنا اضافہ کر دیا گیا ہے جس کی کوئی قانون حیثیت نہیں۔
آئی سی سی آئی کے نائب صدر محمد فہیم خان، ٹریڈرز ویلفیئر ایسوسی ایشن ایف ٹین مرکز کے صدر احمد خان اور چیئرمین طاہر عباسی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ڈی ایم اے نے غیر قانونی طور پر اوپن سپیس الاٹ کر دی ہے اور تجاوزات میں خود ہی اضافہ کر دیا ہے جس کا نوٹس لیا جائے۔
اس موقع پر دیگر شرکاء نے مطالبہ کیا کہ چیئرمین سی ڈی اے کراچی کمپنی، جی ٹین اور جی الیون سمیت دیگر تمام مراکز کا دورہ کریں اور مسائل کا جائزہ لے کر ان کو حل کرنے کیلئے تمام مطلوبہ اقدامات اٹھائیں کیونکہ عدم توجہ کی وجہ سے کئی مارکیٹیں اسلام آباد کا حصہ ہی نہیں لگتیں۔

By Editor