کراچی (ویب ڈیسک)

وفاقی حکومت کی جانب سے پرائز باندز کیش کروانے کی مدت میں توسیع کردی گئی ہے۔وفاقی حکومت کی جانب سے پرائز بانڈز کیش کروانے کی مدت میں توسیع کا نوٹیفکیشن 16 دسمبر کوجاری کردیا گیا تھا، جس کے مطابق ساڑھے 7 ہزار، 15 ہزار، 25 ہزار اور 40 ہزار روپے کے پرائز بانڈز کیش کرانے کی مدت میں 31 مارچ 2022 تک توسیع کردی گئی ہے۔ پرائز بانڈز کو سیونگ سرٹیفکیٹس اور پریمیم پرائز بانڈز سے تبدیل کیا جا سکتا ہے یا فیس ویلیو پر کیش کیا جا سکتا ہے۔ بانڈز کو ایس بی پی بینکنگ سروسز کارپوریشن کے 16 فیلڈ دفاتر اور چھ مجاز کمرشل بینکوں یعنی نیشنل بینک آف پاکستان، حبیب بینک لمیٹڈ، یونائیٹڈ بینک لمیٹڈ، ایم سی بی بینک لمیٹڈ، الائیڈ بینک لمیٹڈ اور بینک الفلاح لمیٹڈ کی شاخوں میں پریمیم پرائز بانڈز میں تبدیل کیا جا سکتا ہے۔ اس سے قبل بیرون ملک مقیم پاکستانی جن کے پاس پرائز بانڈز موجود ہیں، ان کی جانب سے پریمیم بانڈز کے بدلے پرائز بانڈز کے تبادلے کے لیے مزید وقت مانگا تھا، کیونکہ کرونا کے پیش نظر سفری پابندیوں کی وجہ سے ان کے لیے پاکستان کا سفر کرنا ممکن نہیں ہے۔ حکومت نے جون 2019 میں ان بانڈز کو بند کر دیا تھا، لیکن لوگوں کو 31 دسمبر 2021 تک ان کیش کرنے کی اجازت دی تھی۔ پرائز بانڈز کو مرحلہ وار ختم کرنے کا فیصلہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (فیٹف)کی سفارشات کے پیش نظر کیا گیا۔فیٹف نے دعوی کیا  تھا کہ بانڈز میں ملکیت کی وضاحت نہیں کی گئی اور پرائز بانڈ کی ٹریڈنگ کو کنٹرول کرنے کے لیے کوئی موثر نظام موجود نہیں ہے۔ جس کے بعد مسلم لیگ(ن) کی حکومت نے اپریل 2017 میں پریمیم پرائز بانڈز کا اجرا کیا تھا، یہ پرائز بانڈز صرف کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈز اور بانڈ ہولڈرز کے بینک اکانٹس کے لیے جاری کیے جاتے ہیں۔ ابتدائی طور پر کیشمنٹ یا ریڈیمپشن کی آخری تاریخ مارچ 2020 تھی۔

By Editor