لاہور ہائیکورٹ نے ٹیکسٹائل ملز میں گیس بلز میں اضافہ تاحکم ثانی روکدیا

وفاق اور اوگراسمیت دیگر فریقین کو نوٹسز جاری ، تحریری وضاحت طلب

لاہور ( ویب  نیوز)لاہور ہائی کورٹ نے ٹیکسٹائل ملز میں بجلی پیدا کرنے کے لئے استعمال ہونے والی گیس کے بلوں میں اضافہ تاحکم ثانی روک دیا۔ لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس عابد عزیز شیخ نے وفاق اور اوگراسمیت دیگر فریقین کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے تحریری وضاحت طلب کر لی۔ جسٹس عابد عزیز شیخ نے19ٹیکسٹائل ملز کی جانب سے دائر کردہ درخواست پر سماعت کی۔ درخواست گزاروں نے نقطہ اٹھایا تھا کہ وفاقی حکومت نے30نومبر 2021کو گیس کے ذریعہ بجلی بنانے والے انڈسٹریل یونٹس کے بلوں میں اضافہ کیا ہے۔ وفاقی حکومت نے آرایل این جی ریٹ ساڑھے چھ ڈالر فی ایم ایم بی ٹی یو سے بڑھا کر نو ڈالر کردیا۔ درخواست گزاروں کی جانب سے یہ نقطہ اٹھایا گیا کہ درخواست گزارجنریٹر کے ذریعے بجلی پیدا کرکے فروخت کرنے والوں کی تعریف میں نہیں آتے ، عدالت گیس کے ذریعہ بجلی پیدا کرنے وانوں کے گیس بلوں میں اضافہ کا اقدام کالعدم قراردے اور کیس کے حتمی فیصلہ تک حکم امتناعی جاری کیا جائے۔ عدالت نے حکم امتنائی جاری کرتے ہوئے وفاقی حکومت اور اوگراسمیت دیگر فریقین کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے 15روز میں تحریری وضاحت طلب کر لی ہے۔

By Editor