عبدالولی خان یونیورسٹی کے طلباء کا ایف پی سی سی آئی کا مطالعاتی دورہ
 پاکستان کی ترقی اور خوشحالی تعلیم کا فروغ ضروری ہے’ مرزا عبدالرحمن
اکیڈمیا صنعتی ترقی کیلئے بہترین افرادی قوت و آئیڈیاز فراہم کرتا ہے’ چیف کوآرڈینیٹر
اسلام آباد(ویب نیوز  )
اکیڈمیا نہ صرف صنعت اور عالمی مقابلے کے لیے بہترین افرادی قوت فراہم کرتا ہے بلکہ اختراعی آئیڈیاز بھی فراہم کرتا ہے، یہ بات ایف پی سی سی آئی کے چیف کوآرڈینیٹر مرزا عبدالرحمن نے عبدالولی خان کے بزنس انکیوبیشن سینٹر کے طلبا کے ساتھ ایک انٹرایکٹو سیشن میں کہی۔ یونیورسٹی آف مردان۔ طلبا کے ایک وفد نے ایف پی سی سی آئی کیپیٹل آفس اسلام آباد کا دورہ کیا۔اس دورے کا بنیادی مقصد کاروباری آئیڈیا جنریشن، اسکریننگ اور اس کے محتاط انتخاب کے بارے میں آگاہی کو بڑھانا تھا۔ طلبا کو کاروباری افراد کو درپیش چیلنجز اور چیلنجز سے نمٹنے کے طریقوں کے بارے میں بتایا گیا۔ یونیورسٹی کے فیکلٹی ممبران نے فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس کے نمائندوں کے ساتھ ایک میٹنگ کی جس میں اکیڈمیا اور انڈسٹری کے درمیان روابط کو مضبوط کرنے کے لیے مستقبل کے تعاون کے مواقع، طلبہ کی جگہ کا تعین، انٹرن شپ کے مواقع اور مشترکہ سیمینارز پر تبادلہ خیال کیا۔طلبا کی طرف سے کھلے مباحثے میں معیشت میں تجارتی اداروں اور FPCCI کے کردار کے بارے میں ایک مختصر پریزنٹیشن دی گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ اس طرح کی پیشکش ان کے لیے پورے پاکستان کے ممبر اداروں کے ساتھ ہم آہنگی پیدا کرنے میں بہت مددگار ثابت ہوگی۔ایف پی سی سی آئی کے چیف کوآرڈینیٹر مرزا عبدالرحمن نے طلبا کو پاکستان کی صنعت و تجارت، معاشی ترقی کے بارے میں آگاہ کیا اور طلبا کے ساتھ اپنی متاثر کن کہانی شیئر کی کہ کس طرح انہوں نے بغیر کسی کام کے آغاز کیا اور ترقی کرتے ہوئے  بڑے کاروباری افراد میں شامل ہوئے۔ انہوں نے طلبا کی حوصلہ افزائی بھی کی کہ وہ اپنے کاروباری منصوبے تیار کریں اور وہ ہر ممکن طریقے سے اپنے کام کو ترتیب دینے میں ان کی مدد کریں گے۔مرزا عبدالرحمن نے یقین دلایا کہ ایف پی سی سی آئی اور انڈسٹریز عبدالولی خان یونیورسٹی مردان کے طلبا کو بہتر کاروباری اور تاجر بنانے کے لیے ان کی ہر ممکن مدد کریں گے۔ انہوں نے مختلف صنعتوں سے کاروباری مہارت اور سٹارٹ اپ آئیڈیاز کا اشتراک کرنے کی مزید یقین دہانی کرائی۔ انہوں نے کہا کہ اکیڈمی نہ صرف صنعت میں جدت طرازی اور عالمی مقابلے کے لیے بہترین افرادی قوت فراہم کرتی ہے بلکہ اختراعی آئیڈیاز بھی فراہم کرتی ہے۔مرزا عبدالرحمن کی رائے تھی کہ مختلف یونیورسٹیوں اور چیمبرز کے بزنس انکیوبیشن سینٹرز پالیسی کی وکالت، تجارتی سرمایہ کاری، پیداواری صلاحیت اور علم پر مبنی معیشت میں پائیدار اقتصادی ترقی میں اہم کردار ادا کرتے ہیں، اس لیے ایف پی سی سی آئی اور مردان یونیورسٹی کو باہمی طور پرپاکستان کی ترقی صنعت و تجارت کے فروغ کیلئے مختلف شعبوں میں تحقیق پر مبنی حل تلاش کرنے کی حکمت عملی بنانا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کے لیے قدرتی وسائل کا بھرپور استعمال اور تعلیم کا فروغ ضروری ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان قدرتی وسائل سے مالا مال ہے اور یہاں کاروبار کے وسیع مواقع موجود ہیں اور عوام بالخصوص پڑھے لکھے نوجوان ان مواقعوںسے مستفید ہو سکتے ہیں۔ چیف کوآرڈینیٹر ایف پی سی سی آئی نے طلبا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی تعلیم کے خزانے سے اپنے صوبے اور پورے ملک کا قیمتی اثاثہ بن سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سرمایہ کاری کے وسیع مواقع موجود ہیں، تجارت اور سرمایہ کاری بڑھانے کے لیے بھی کوششیں کی جانی چاہئیں۔ ہمیں اپنے ملک کی ترقی اور خوشحالی کے لیے محنت، لگن اور ایمانداری سے کام کرنا ہوگا، مرزا عبدالرحمن نے ریمارکس دئیے کہ یہ ہم سب کی مشترکہ ذمہ داری ہے کہ ہم دنیا کو یہ باور کرائیں کہ پاکستان کے لوگ ترقی پسند ہیں اور ترقی کی نئی راہوں کی تلاش کے لیے سخت محنت کریں گے۔بعد ازاں AWKU کے طلبا نے معزز مہمانوں کے ساتھ اپنی گروپ فوٹوز بنوائیں۔ یہ سفر طلبا کے لیے ایک بہترین تجربہ تھا کیونکہ انہوں نے نہ صرف ایف پی سی سی آئی، صنعت اور تجارت کے بارے میں سیکھا بلکہ تجربہ کار کاروباری شخصیت اور ان کی کہانیوں سے بھی متاثر ہوا۔

By Editor