چار ماہ میں درآمدت23ارب50کروڑ،برآمدات9ارب70کروڑ ڈالر ہونا تشویشناک ہے

ڈالرکی قیمت میں اضافہ معیشت کیلئے خطرے کی گھنٹی روپے کا زوال کئی سالوں کی ترقی کو ختم کردے گا ،ڈائریکٹر پاسڈیک

لاہور (ویب ڈیسک)

تاجر رہنما  و پاکستان سٹون ڈویلپمنٹ کمپنی کے بور ڈ آف ڈائریکٹرز کے رکن خادم حسین نے کہا ہے کہ چار ماہ میں تجارتی خسارہ ریکارڈ سطح 13ارب 80کروڑ کی سطح پر پہنچنا معیشت کی تباہی کا اشارہ ہے ۔چار ماہ میںدرآمدات23ارب 50کروڑ جبکہ برآمدات9ارب 70کروڑ ڈالر ہونا تشویشناک امر ہے4ماہ میں تجارتی خسارہ ریکارڈ سطح پر پہنچ گیا ابھی رواں مالی سال کے8ماہ باقی ہیں تجارتی خسارہ معیشت کی بربادی کا شارہ ہے تجارتی خسارے سے کرنٹ اکائونٹ خسارہ بھی بڑھنے لگا ۔انہوںنے کہا کہ ملک میں گندم اور چینی کی ریکارڈ پیداوار کے باوجود ناقص پالیسیوں کے باعث چینی اور گندم درآمد کرنی پڑی خوراک کی آئٹم کی درآمدات 2ارب70کروڑ ڈالر تک پہنچ گئیں ۔حکومت تجارتی خسارہ کو روکنے کیئے پرتعیش اور غیر ضروری اشیاء کی درآمدات پر کنٹرول کرے تاکہ تجارتی خسارہ پر قابو پایا جاسکے۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے فیروز پور بورڈ کے تاجروں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔خادم حسین نے کہا کہ ڈالرکی قیمت میں اضافہ معیشت کیلئے خطرے کی گھنٹی روپے کا زوال کئی سالوں کی ترقی کو ختم کردے گا   اس لیے روپے کی قدر میں استحکام کیلئے اقدامات کیے جائیں کیونکہ مضبو ط معاشی پالیسیوں سے ہی ملکی معیشت مستحکم ہوگی انہوںنے کہا کہ ڈالر کی قیمت بڑھنے کا سب سے زیادہ اثر پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں پر پڑے گا جو بیشتر درآمد کی جاتی ہیں پٹرول ڈیزل مہنگا ہونے کے نتیجہ میں کرائے اور ٹرانسپورٹ کی لاگت میں اضافے کی شکل میں ظاہر ہوگا جس سے اشیاء کی ترسیل کی لاگت بڑھے گی اور نتیجہ عوام کو مہنگائی کی شکل میں بھگتنا پڑے گا اس لیے حکومت ڈالر کی قیمت کو کنٹرول کرے اور روپے کی قدر میں اضافہ کیلئے فوری اقدامات اٹھائے۔

By Editor

جواب دیں